167

لاہور ہائیکورٹ نے عطائیوں کیخلاف بڑا فیصلہ سنا دیا: رپوٹ تجمل شاہ

لاہور ہائیکورٹ نے عطائیوں کیخلاف بڑا فیصلہ سنا دیا

عدالت نے عطائیوں کے کلینک سربمہر کرنے کا پنجاب حکومت کا اختیار قانونی قرار دے دیا

عدالت نے کلینک سربمہر کرنے کیخلاف عطائیوں کی درخواستیں خارج کر دیں

جسٹس عائشہ اے ملک نے 29صفحات پر تحریری فیصلہ جاری کر دیا

عدالت نے کلینک سربمہر کرنے کیخلاف پنجاب حکومت کا مئوقف قانونی قرار دیدیا

پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن ایکٹ صحت عامہ کے تحفظ کیلئے بنایا گیا، سرکاری وکیل

صحت عامہ کیلئے عطائیوں کو اڈے چلانے کی اجازت نہیں دی جا سکتی، سرکاری وکیل

ہیلتھ کیئر کمیشن ایکٹ کا مقصد صحت عامہ سے متعلق ہر شعبے کو ریگولیٹ کرنا ہے، عدالتی فیصلہ

لاہور ہائیکورٹ پہلے ہی
صحت عامہ کیلئے احتیاطی تدابیر کا اصول طے کر چکی ہے، فیصلہ

صحت عامہ سے متعلق کسی شعبے کو قانون سے ہٹ کر کام کرنے کی اجازت نہیں دے سکتے، فیصلہ

ہیلتھ کیئر کمیشن عطائیوں کے کلینک سربمہر کرنے کا مکمل اختیار رکھتا ہے، فیصلہ

عطائیوں کے سکلز ڈویلپمنٹ کونسلزسے حاصل کردہ تربیتی ڈپلومے بھی غیرقانونی قرار

ایسے ڈپلوموں کی ہیلتھ کیئر کمیشن ایکٹ کے تحت کوئی حیثیت نہیں، عدالتی فیصلہ

صرف چار قسم کی کوالیفیکیشن ہولڈرز ہی قانونی طور پر کلینیکل پریکٹس کر سکتے ہیں

Qualified & Registered with:
1- PMDC
2-NCH
3-NCT
4-Nursing council

All other are considered Quacks

According to Health Law & PHC LAW dispensers , Health Technicians , Dental Technicians , Laboratory Technicians , X-Ray , Ultrasound Technicians & Lady Health workers ETC are not allowed for private clinical practise ,So be careful

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں